فی الحال ریورس سوئنگ کو بھول جائیں

فوٹو عرفان پھٹان ٹیوٹر اکاونٹ

کیا تھوک کے بغیر کرکٹ بال کو سوئنگ کیاجا سکتا ہے؟

یہ ایک ایسا سوال ہے جو اجکل کرکٹ کے حلقوں میں ہر جگہ زیر بحث ہے۔
خاص کر موجودہ حالات میں جب کرکٹ کو نئے طریقوں کے ساتھ بحال کیا گیا ہے جس میں سب سے اہم بات گیند کو تھوک کے ساتھ چمکانے پر پابندی عائد کی گئی ہے۔
اور یہ پابندی فاسٹ بولروں کے لئے مشکلات پیدا کررہی ہے۔ اس حوالے سب سے اہم بیان سابق ہندوستانی فاسٹ بولر عرفان پھٹان کا سامنے آیا ہے۔
ان کا خیال ہے کہ موجودہ حالات میں بولرز کو پرانی گیند کو ریورس کرنا بھولنا ہوگا ان کا کہنا تھا کہ جب تک کرونا کی وجہ سے پابندی ہے تیز گیندبازوں کے لئے راستہ کھٹن رئے گا۔ ان کے مطابق تھوک کی تہہ موٹی ہوتی ہے اس کا اثر بال پر زیادہ ہوتا ہے جس کی وجہ سے گیند سوئنگ ہوتی ہے۔
ایک بھارتی نجی ٹی وی چینل کو انٹرویو دیتے ہوئے عرفان نے خیال ظاہر کیا کہ یا تو سوئنگ بولنگ کے لئے موزوں پیچ بنائی جائے یا پھر کسی متبادل طریقے کے استعمال کی اجازت دی جائے بصورت دیگر اس بات کو بھول جائے کہ ریورس سونگ بھی کوئی چیز ہوتی ہے ۔
ایک اور ہندوستانی سابق فاسٹ بولر شیش نہرا نے بھی کچھ اسی طرح کے خیالات کا اظہار کیا انہوں نے ویسٹ انڈیز اور انگلینڈ کے حالیہ ٹیسٹ کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ گیند بلکل بھی ریورس سوئنگ نہیں ہورئی تھی ان کے مطابق انگلینڈ کے فاسٹ بولر جمی انڈرسن کم لینتھ سے بولنگ کررہے تھے اور ایسا لگ رہا تھا کہ عام سوئنگ بھی نہیں مل رہی ہے

تحریر محمد احمد

اپنا تبصرہ بھیجیں